Urdu News

نوجوان نسل بالخصوص خواتین کی ترقی کے لیے گوگل کیرئیر سرٹیفکیٹس کا اجراء

اسلام آباد: وقت کی اشد ضرورت ہے کہ نوجوان نسل بالخصوص خواتین کی استعداد کار میں اضافہ کر کے انہیں ملک کا فائدہ مند شہری بنایا جائے۔ ان خیالات کا اظہار صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے گوگل کیرئیر سرٹیفکیٹ کے اجرا سے متعلق تقریب رونمائی میں ایک وڈیو بیان کے ذریعے کیا۔
پاکستان میں گوگل کیرئیر سرٹیفکیٹس کا اجراء گوگل، انسٹی ٹیوٹ آف رورل مینجمنٹ (IRM) اور Ignite نے مل کر کیا ہے۔
اس پروگرام کو لاہور، پشاور اور اسلام آباد میں لائیو ٹیلی کاسٹ کیا گیا، صارفین کا ایک بڑا حصہ اس پروگرام میں آن لائن شامل ہوا۔

تقریب رونمائی میں صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ مجھے بہت خوشی ہے کہ گوگل، IRM اور Ignite پاکستان میں گوگل کیرئیر سرٹیفکیٹ شروع کر رہے ہیں۔ پاکستان کو اس قسم کی تربیت کی ضرورت ہے جو نوجوانوں کے مستقبل کو سنوار سکے خاص کر ان نوجوانوں کو جو یونیورسٹی کی تعلیم کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتے۔ پروگرام میں خواتین کی شمولیت کا ایک بہت اہم حصہ ہے۔ ان کورسز کے ذریعے پاکستان ڈیجیٹل ٹیکنالوجی میں آکے جائے گا،

انہوں نے مزید کہا کہ مجھے امید ہے کہ پاکستان ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے موجودہ انقلاب کے ذریعے ترقی کی نئی منزلیں طے کر سکتا ہے۔ انہوں نے نوجوان نسل کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھائیں اور اپنا مستقبل روشن بنائیں کیونکہ یہ کورسز مکمل طور پر آن لائن اور مفت ہیں۔ مزید یہ کہ ان کورسز کے ذریعےپاکستان کے نوجوانوں کو اپنی کمائی کو بڑھانے میں بھی مدد ملے گی۔

پروگرام کے آغاز میں گوگل، وزارت آئی ٹی، صنعت اور اکیڈمیا کے مختلف مقررین نے پاکستان میں گوگل کیرئیر سرٹیفکیٹس کی اہمیت پر شرکاء سے خطاب کیا۔ ڈاکٹر رومی ایس حیات نے کہا کہ “انہیں امید ہے کہ اس طرح کے پروگرامز ملک کا مستقبل روشن کر دیں گے اور جلد ہی ہم ڈیجیٹل دنیا میں ایک ترقی کرتا ہوا ملک بن جائیں گے”۔ سی ای او Ignite نے اپنی تقریر میں یہ کہا کہ “Ignite نے ہمیشہ پاکستان کی ڈیجیٹل معیشت میں اپنا حصہ ڈالا ہے اور اس سرٹیفکیٹ کے ذریعے Ignite ڈیجیٹل معیشت کو مزید مضبوط کرنے کا ارادہ رکھتی ہے”۔
آخر میں شرکاء کو گوگل کیرئیر سرٹیفکیٹ پروگرام میں داخلہ لینے اور اس میں شامل ہونے کا طریقہ بھی بتایا گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button
%d bloggers like this: