Health Tips

کیا آپ ہر روز تھکاوٹ محسوس کرتے ہیں؟ یہ آسان طریقے آزمائیں۔

کیا آپ 85% لوگوں کا حصہ ہیں جو ہر روز تھکاوٹ محسوس کرتے ہیں؟

یہ جسم میں توانائی کی کمی کی وجہ سے ہے۔ کچھ وجوہات کا ہم زکر کرتے ہیں جن میں سے کوئی بھی وجہ آپ کی کم توانائی کا سبب بن سکتی ہے
ذہنی دباؤ
خراب صحت
وزن کا بڑھاؤ
توجہ کی کمی
کمزور یادداشت
اب سوال یہ ہے کہ آپ اپنی توانائی کو کیسے بڑھائیں؟

آپ کی تھکاوٹ کو دور کرنے کے لیے یا کم کرنے کے لئے کچھ طریقے درج کرتاہوں۔ ان پر عمل کریں امید ہے کافی فائدہ حاصل ہوگا۔

اپنی نیند کو درست کریں۔ نیند کی کچھ حالتیں ہیں جیسا کہ ہلکی نیند، گہری نیند، بہت ہی گہری نیند۔  کوشش کریں کہ روزانہ آٹھ گھنٹے کی نیند لیں۔

یہ آپ کی یادداشت، توانائی اور جسم کی بحالی کے لیے بہت ضروری ہے۔

آپ اپنی نیند کو کیسے بہتر بنا سکتے ہیں۔

 تحقیق کے دوران ماہرین اس بات پر پہنچے کہ رات کو سونے کے بعد نیند کا معیار بہتر نہ ہونے کی وجہ سے صبح بیدار ہونے کے بعد بھی تھکاوٹ ، غنودگی اور سستی محسوس ہوتی ہے۔

ماہرین کے مطابق نیند کے کئی چکر ہوتے ہیں، جن کا آغاز ہلکی نیند، گہری نیند اور پھر ہلکی نیند کی طرف آتا ہے، دو چکر مکمل ہونے کے بعد جب تیسرا چکر شروع ہو تو اس کا مکمل ہونا ضروری ہے، ورنہ دن بھر تھکاوٹ، سستی اور کاہلی محسوس ہوتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ عام طور پر نیند اپنے چکر مکمل کرتی ہے، بہت سارے لوگ آخری چکر جو گہری نیند کا وقت ہوتا ہے اُس کے درمیانی وقت میں اٹھ جاتے ہیں، جس کی وجہ سے انہیں بیدار ہونے کے بعد سستی اور تھکاوٹ محسوس ہوتی ہے۔

بستر پر جانے سے پہلے کچھ عادتیں بنائیں مثلاً
سونے سے 1 گھنٹہ پہلے فون اسکرین سے پرہیز کریں۔
سونے سے 2 گھنٹے پہلے متحرک کام (ورزش) کرنے سے گریز کریں۔
سونے سے 3 گھنٹے پہلے کھانے سے پرہیز کریں۔
یہ آپ کے دماغ کو آرام دہ حالت میں رکھتا ہے اور آپ کو آسانی سے نیند آنے دیتا ہے۔

سونے سے 1 گھنٹہ پہلے مصنوعی روشنی سے پرہیز کریں۔

کمپیوٹر، موبائل فون یا ٹی وی جیسے الیکٹرانک آلات سے نکلنے والی نیلی روشنی میلاٹونن کی پیداوار کو کم کرتی ہے۔

اگر یہ ناگزیر ہے تو، نیلی روشنی کو روکنے والے شیشے استعمال کریں۔

یہ آپ کے جسم کو گہری اور پرسکون نیند کے لیے پرائم کرے گا۔

اپنی کیفین کے استعمال کو درست کریں۔
ہم سب جانتے ہیں کہ کیفین آپ کو بیدار رہنے میں مدد دیتی ہے۔

لیکن ہم میں سے بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ کیفین آپ کے جسم میں 10 گھنٹے تک رہتی ہے

لہذا، اگر آپ دوپہر 1 بجے کافی پیتے ہیں، تو آپ اسے رات 11 بجے بھی محسوس کر سکتے ہیں۔

یہ نہ صرف آپ کی نیند کی مقدار اور معیار کو متاثر کرتا ہے۔ سونے سے 10 گھنٹے پہلے کیفین کا استعمال ترک کر دیں۔

مناسب ورزش

بہت سے لوگ سوچتے ہیں کہ انہیں ورزش کرنے کے لیے توانائی کی ضرورت ہے۔  یا ورزش کرنے سے توانائی ضائع ہوگی لیکن سچ یہ ہے کہ انہیں توانائی حاصل کرنے کے لیے ورزش کرنے کی ضرورت ہے۔

ہفتے میں 3 بار 20 منٹ کی جسمانی ورزش کا مقصد بنائیں۔

باقاعدگی سے چہل قدمی کریں، مراقبہ کریں یا یوگا/اسٹریچنگ کریں۔ بس جو بھی سرگرمی آپ کو پرجوش کرتی ہے اسے کریں۔ لیکن سستی پیدا کرنے والی نہ ہو۔

یہ آپ کو کچھ غلط لگ سکتا ہے لیکن باقاعدگی سے ورزش کرنے سے آپ کو 10 گنا زیادہ توانائی ملے گی۔

منفی خیالات سے پرہیز کریں۔ ہر وقت کچھ نہ کچھ سوچنا بھی دائمی تھکاوٹ کا باعث بنتا ہے۔

دائمی تھکاوٹ کا باعث بننے والی کچھ عام وجوہات بھی ہوسکتی ہیں جیسے فحش لت، تناؤ کا ماحول، ہارمونل عدم توازن یا مناسب غذائیت کی کمی۔

معلوم کریں کہ کون سی چیز آپ کی توانائی کو ختم کرتی ہے اور اسے ختم کرنے کے لیے کام کریں۔

آپ کے خیال میں اور کون سی وجوہات توانائی کی سطح کو کم کرنے کا سبب بن سکتی ہیں؟ اپنے خیالات کو چیک کریں کہیں منفی تو نہیں ؟ اگر خیالات منفی ہیں تو ان سے گریز کریں۔ اپنی روز مرہ کی عادتوں کو چیک کریں اور ان میں تبدیلی لائیں ۔ کچھ نہ کچھ ایسا ضرور کریں جس سے آپ کو دلی و دماغی سکون ملے، ہر اس چیز سے گریز کریں جو آپ کو بے چین کرے۔

اگر جسمانی کمزوری کی وجہ سے تھکاوٹ ہوتی ہو تو اپنے فیملی ڈاکٹر سے مشورہ کرکے ملٹی وٹامن یا خوراک کو بہتر کریں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Back to top button
%d bloggers like this: